Pubg developer Brendan Greene 422

پب جی کے بانی کی دل دہلا دینے والی کہانی

دوستوں پب جی  (PUBG)  دنیا کی مشہور گیمز میں سے ایک ہے۔ ہم میں سے شاید ہی کوئی ایسا ہو جس نے پب جی کے بارے میں سنا  نہ ہو۔  بچے ہوں یا بڑے سب ہی پب جی کھیلنے کے شوقین ہیں۔ لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ پب جی کو کس نے بنایا وہ کہتے ہے نہ کہ ایک چھوٹا ساآئیڈیا آپ کی زندگی بدل سکتا ہے۔ اسی طرح پب جی نے بھی کسی کی زندگی تبدیل کر دی۔ میں بات کر رہا ہوں  برینڈن  گرین (‎Brendan Greene)   کی ، برینڈن  ہی وہ آدمی ہے جس نے پب جی کو بنایا۔  ایک وقت تھا کہ یہ آدمی بےروزگار تھا۔ اس کا بنک اکاؤنٹ بلکل خالی تھا لیکن پھر  پب جی نے اس کی زندگی کو راتوں رات بدل کر رکھ دیا۔

برینڈن  کی کہانی انتہائی موٹیویشنل ہے۔ برینڈن  آئیرلینڈ میں پیدا ہوا تھا اور اپنے کیرئیر کے شروعات میں یہ ایک فوٹو گرافر اور ڈی  جے تھا اس کے ساتھ ساتھ یہ  ایک پارٹ ٹائم  ویب ڈیزائنر بھی تھا ۔ یعنی برینڈن   اپنی زندگی شادیوں میں  فوٹو گرافی   کر کے اور   ویب سائٹس کو ڈیزائن کرکے گزار رہا تھا اور کبھی کبھی یہ ڈی جے بھی   بن جاتا تھا۔ برینڈن  کی زندگی میں کوئی خاص مقصد نہیں تھا۔ اس کو فوٹو گرافی  کا بہت شوق تھا۔  اور اسی لیئے اس نے برازیل جانے کا فیصلہ کیا۔  برازیل میں یہ فوٹو گرافی کر کے اپنا گزارا  کرتا تھا اور وہی اس کی ملاقات ایک لڑکی سے ہوئی بہت جلد برینڈن  نے اس لڑکی سے شادی  کر لی۔  لیکن قسمت کو کچھ اور ہی منظور تھا یہ شادی صرف دو سال تک چلی اور برینڈن  اور اس کی بیوی کی طلاق ہوگئی یہی وہ وقت تھا جب برینڈن  پر  مشکلات کا پہاڑ ٹوٹ پڑالیکن زندگی میں آنے والی یہی مشکلات ہمارے لئے نئے راستے بھی کھول رہی ہوتی ہیں اور یہی کچھ برینڈن  کے ساتھ ہوا۔

 2013میں برینڈن  برازیل میں تھا اور یہ پھس چکا تھااور اس کے پاس پیسے ختم ہوچکے تھے اور یہ بہت مشکل سے اپناگزر بسر کر رہا تھا۔ برینڈن  کے مطابق اس کے پاس اتنے پیسے بھی نہیں تھےکہ  یہ جہاز کی ٹکٹ لے اور واپس آئرلینڈ چلا جائے اسی لیے برینڈن  نے ٹکٹ خریدنے کے لیے پیسے جمع کرنا شروع کر دیئے اس نے اپنے خرچے کم کرلیئے اور اپنا زیادہ تر وقت اپنے کمرے میں ہی گزارتا تھا۔ تاکہ اس کی زیادہ پیسے خرچ نہ ہوں اور دوستوں یہی وہ وقت تھا اس نے وڈیو گیمز کھیلنا شروع کر دیں تاکہ اس کا وقت کٹ سکےیہں سے برینڈن کو آن لائن ویڈیو گیمز کے بارے میں پتہ چلا۔ برینڈن   کوئی گیم ڈویلپر نہیں تھا۔ لیکن اس کا انٹرسٹ  اس طرف بڑھتا چلا گیا ہے 2014 میں پیسے جمع کرکے اس نے جہاز کے ٹکٹ خرید لی اور یہ آئیرلینڈ  واپس آگیا لیکن مشکلات کا سلسلہ  یہاں بھی ختم نہیں ہوا۔

برینڈن گرین کا آئیڈیا کام کر گیا

برینڈن  کے پاس پیسے نہ ہونے کے برابر تھے ۔ اور اسکا بنک اکاؤنٹ بلکل خالی تھا۔ اور اس  کو کوئی کام بھی نہیں مل رہا تھا یہاں تک کہ یہ ویلفیئر کے پیسوں پر گزارہ کرنے پر مجبور ہوگیا یعنی اس کو آئرلینڈ کی حکومت زندگی گزارنے کے لئے تھوڑے سے پیسے دیتی تھی کیونکہ یہ بے روزگار تھا برینڈن   کے لئے اس کی زندگی ختم ہو چکی تھی یہ تقریبا چالیس سال کا ہو گیا تھا اور اس کی زندگی میں ناکامیوں کے علاوہ کچھ نہیں تھا اس کی طلاق بھی ہوچکی تھی اور یہ اب اپنے والدین کے گھر میں رہتا تھا اور اس کے والدین برینڈن  کے لیے سخت پریشان تھےدوستوں برینڈن   کے پاس کرنے کو کچھ اور نہیں تھا تو اس نے فری  گیمنگ مارٹ بنانے شروع کر دیئے برینڈن  کو ایک جاپانی فلم بیٹل رویال  (Battle Royale Japnees Film)  بہت پسند تھی اس فلم میں بھی دکھایا گیا تھا کہ کچھ لوگ کیسے ایک جزیرے پر خود کو زومبی سے بچاتے ہیں یہ کونسپٹ برینڈن  کو بہت پسند آیا برینڈن  نے آن لائن گیم ارماں ٹو  (Arma II) میں اسی فلم کی کہانی سے متاثر ہو کے ایک روموٹ بنا دیا اس کے ساتھ ساتھ یہ گیمز کو ڈیزائن اور گیمز کی کوڈنگ بھی سیکھنا شروع ہوگیا برینڈن  کی قسمت اچھی تھی کہ ارما ٹو میں جو اس نے ماڈل بنایا تھا وہ کافی مشہور ہو گیا اور برینڈن کو سونی آن لائن انٹرٹینمنٹ  (Sony Online Entertainment)  نامی گیم کمپنی کی طرف سے ایک کال آئی جس میں انہوں نے برینڈن کو ایک کنسلٹنٹ کے طور پر ہائیر  کرنے کی آفر کی برینڈن  بہت خوش تھا یہ فورن ویلفیئر آفس کیا اور اس نے ان کو کہا کہ اسے اب ویلفیئر کے پیسوں کی ضرورت نہیں ہے سونی کے ساتھ برینڈن  نے دو سال تک ایچ ون ذی ون نامی ایک گیم  پر کام کیا۔

 PUBG means Player Unknown’s Battlegrounds – پب جی کا مطلب

2016 میں  برینڈن  کو ایک ساؤتھ کورین نامی کمپنی  بلو حول (Bluehole Company)   نے  رابطہ کیااور اس کو اپنی ایک بیٹل رویال گیم بنانے کی پیشکش کی اور یوں برینڈن   ساوتھ کوریا چلا گیا پب جی کا مطلب پلیئر ان نون بیٹل (PUBG means Player Unknown’s Battlegrounds)    ہوتا ہے پلئیر ان نون دراصل برینڈن   کا ہی نام تھا جو یہ آن لائن گیم کھیلتے ہوئے استعمال کرتا تھا اور اس نے اسی نام پر پب جی کا نام رکھ لیا اور یہیں سے برینڈن نے پیچھے مڑ کر نہیں دیکھادسمبر 2017 میں پب جی کو مائیکروسافٹ ونڈوز (Microsoft Windows)   کے لئے لانچ کیاگیا اور 2018 میں پلے سٹیشن اور  ایکس باکس کے لیے اور پب جی کی  سیلز اتنی تیزی سے بڑھنے لگیں کہ برینڈن  بھی حیران رہ گیا صرف ڈیڑھ سال میں اس گیم کی پانچ کروڑ کا پی بک چکی تھیں اور موبائل پر اس کو 200 ملین سے زیادہ لوگ ڈاونلوڈ کر چکے تھے دوستوں برینڈن  کی زندگی مکمل طور پر تبدیل ہو گئی

PUBG Developer Income – پب جی کے بانی کی کمائی

آج برینڈن کتنا دولت مند ہے یہ سن کر آپ حیران رہ جائیں گے کبھی ویلفیئر کے پیسوں پر انتہائی غربت میں جینے والے برینڈن کی آج نیٹ ورتھ 200  ملین ڈالر سے یعنی بیس کروڑ ڈالرز جوکہ 32 سو کروڑ روپے بنتے ہیں آج برینڈن ایمسٹرڈیم میں رہتا ہے اور 43 سال کا ہو چکا ہے لیکن اتنا پیسہ آنے کے بعد بھی یہ ابھی بھی سادہ زندگی گزارتا ہے ایک انٹرویو میں برینڈن  نے بتایا تھا کہ اس نے جو کچھ بھی کمایا ہے وہ اپنے سے زیادہ اپنی بیٹی پر خرچ کرنا چاہتا ہے دوستوں برینڈن   کی   زندگی سے ایک چیز تو واضح ہے کہ آپ کی ایج سے کوئی فرق نہیں پڑتا ایک چھوٹا سا آئیڈیا اور بہت ساری محنت آپ کی زندگی کسی وقت بھی  تبدیل کر سکتے ہیں برینڈن اسی کی ایک مثال ہے۔

پوسٹ کو شیئر کریں۔۔