Naseer Turabi Urdu Poetry wo bewafa hai to kia 468

نصیر تُرابی اُردو شاعری

Naseer Turabi  Poetry in Urdu
2 line Urdu Poetry SMS
نصیر تُرابی شاعری

Wo bewafa hai to kia mat kaho bura us ko

وہ  بے وفا ہے تو کیا ، مَت کہو  بُرا  اُس کو
کہ جو ہوا سو ہوا،  خوش رکھے خُدا اُس کو
Wo bewafa hai to kia mat kaho bura us ko
Kay jo huwa so huwa khush rakhy khuda us ko

نظر نہ آئے تو اُس کی تلاش میں رہنا
کہیں ملے تو پلٹ کر نہ دیکھنا اُس کو
Nazar na aye to us ki tilash main rehna
Kahee milay to palat kar na dikhana us ko

وہ سادہ خُو تھا، زمانے کے خَم سمجھتا کیا
ہوا کے ساتھ چلا ، لے اُڑی ہوا اس کو
Wo sada khu tha, zamanay kay kham samajta kia
Hawa kay sath chala, lay uri hawa us ko

وہ اپنے بارے میں کتنا ہے خُوش گُماں دیکھو
جب اُس کو میں نہ دیکھوں تو دیکھنا اُس کو
Wo apny bary main kitna hai khush guma dekho
Jab us ko mae na dekhun to dekhna us ko

ابھی سے جانا بھی کیا اُس کی کم خیالی پر
ابھی  تو اور بہت ہوگا سوچنا اس کو
Abhi say jana bi kia us ki kam khayali par
Abhi to or bohat ho ga sochna us ko

اُسے یہ دھن کہ مجھے کم سے کم اُداس رکھے
میری دُعا کہ خُدا دے یہ حوصلہ اُس کو
Usay ye dhun key mujhy kam say km udas rakhy
Meri dua key khuda day ye hosla us ko

پناہ ڈھونڈ رہی ہے شبِ گرفتا دلاں
کوئی  بتاؤ میرے گھر کا راستہ اُس کو
Pana dhond rahi hai shab e  garifta dilan
Koi batao mery ghar ka rasta us ko

غزل میں تذکرہ اُس  کا  نہ کر نصیر کہ اب
بُھلا چُکا وہ تجھے تُو بھی بُھول جا اُس کو
Ghazal main tazkra us ka na kar Naseer kaya b
Bhula chukka wo tujhy tu bhi bhula ja us ko

پوسٹ کو شیئر کریں۔۔