john elia poetry in urdu 911

John Elia Poetry in Urdu – جان ایلیا شاعری

Jaun Elia Poetry In Urdu
Woh Kya Kuch Nah Karnay Walay Thay

وہ کیا کچھ نہ کرنے والے تھے
بس کوئی دم میں مرنے والے تھے
Wo kia kuch na karny waly thay
Bas koi dam main marny waly thay

تھے گلے اور گرد باد کی شام
اور ہم سب بکھرنے والے تھے
Thay galay or gardy baad ki sham
Or hum sab bikhray waly thay

وہ جو آتا تو اس کی خوشبو میں
آج ہم رنگ بھرنے والے تھے
Wo jo ata to us ki khushboo main
Aaj hum rang bharny waly thay

صرف افسوس ہے یہ طنز نہیں
تم نہ سنورے سنورنے والے تھے
Sirf afsoos hain ye tanaz nahi
Tum na sanwary sawarny walay thay

یوں تو مرنا ہے ایک بار مگر
ہم کئی بار مرنے والے تھے
Yun to marna hai aik bar magar
Hum kae bar marny waly thay

پوسٹ کو شیئر کریں۔۔
  • 2
    Shares

John Elia Poetry in Urdu – جان ایلیا شاعری” ایک تبصرہ

  1. Mai sehra sehra bhati teri cha mai
    Tera wajood khoua oske raah ma
    Mai muhbt ke mari mai qismat se haari
    Tu qismat ka sikandar tu muhbt ka aari
    Teri yaad ma jaly mera ruwan ruwan
    Teri azeyat se hai mera wajood dhuwa dhuwan
    Meri palkon k sitary dyty hain duhai
    Lout k aa ja mat ban harjai

تبصرے بند ہیں