john elia poetry in urdu 911

John Elia Poetry in Urdu – جان ایلیا شاعری

Jaun Elia Shayari in Urdu
Koi Dam Bhi Main Kab Andar Raha Hon

کوئی دم بھی میں کب اندر رہا ہوں
لیے ہیں سانس اور باہر رہا ہوں
Koi dam bhi main kab andar raha hun
Leye hain saans or bahir raha hun

دھوئیں میں سانس ہیں سانسوں میں پل ہیں
میں روشندان تک بس مر رہا ہوں
Dhuwey mian saans hain saansoo main pal hain
Mae roshandan tak bus mar raha hun

فنا ہر دم مجھے گنتی رہی ہے
میں اک دم کا تھا اور دن بھر رہا ہوں
Fana har dam mujhay genti rahi hai
Mae ek dam ka tha or din phar raha hun

ذرا اک سانس روکا تو لگا یوں
کہ اتنی دیر اپنے گھر رہا ہوں
Zara ek saans roka to laga yun
Key itni der apny ghar raha hun

بجز اپنے میسر ہے مجھے کیا
سو خود سے اپنی جیبیں بھر رہا ہوں
Bajaz apnay mayasar hai mujay kia
So khud say apni jebey bhar raha hun

ہمیشہ زخم پہنچے ہیں مُجھی کو
ہمیشہ میں پس لشکر رہا ہوں
Hameesha zakham pohanchy hain mujhi ko
Hameesha mae bash-e-lashkar raha hun

لٹا دے نیند کے بستر پہ اے رات
میں دن بھر اپنی پلکوں پر رہا ہوں
Luta day nend kay bistar pay ay raat
Mae din bhar apni palkoo par rha hun

پوسٹ کو شیئر کریں۔۔
  • 2
    Shares

John Elia Poetry in Urdu – جان ایلیا شاعری” ایک تبصرہ

  1. Mai sehra sehra bhati teri cha mai
    Tera wajood khoua oske raah ma
    Mai muhbt ke mari mai qismat se haari
    Tu qismat ka sikandar tu muhbt ka aari
    Teri yaad ma jaly mera ruwan ruwan
    Teri azeyat se hai mera wajood dhuwa dhuwan
    Meri palkon k sitary dyty hain duhai
    Lout k aa ja mat ban harjai

تبصرے بند ہیں