jaldi karz utarne ada karne ka wazifa dua 135

جلد قرض اتارنے کا وظیفہ

جلد قرض اتارنے کا وظیفہ۔
Jaldi Karz Utarne Ka Wazifa

آج ہم آپ کو قرض آتارنے کا آسان وظیفہ بتائیں گے۔ دوستوں یہ وظیفہ بہت پُر اثر ہے جن لوگوں نے بھی اس وظیفے کو کیاہے ان لوگوں نے اپنے قرض سے اللہ کی مدد سے بہت جلد نجات حاصل کی ہے۔ بشرطِ وہ قرض کسی نیک مقصد کے لے لیا گیا ہو۔ برے عمل کیلئے لیا گیا قرض اس وظیفہ کی وجہ سے اور بڑھ جائے گا۔ اب آپ سوچ رہے ہوں گے کہ یہ برے عمل کا قرض کون سا قرض ہوتا ہے ۔ برے عمل کا قرض یہ ہوتا ہے ۔ جیسے جُوّے یا شرط کیلئے لئیے جانے والا قرض، کیونکہ اسلام میں جوا اور شرط دونوں حرام ہیں۔ اور دوسرا ہے جھوٹ بول کر لیا گیا قرض کیونکہ جھوٹ ایک بہت بڑا گناہ ہے۔ اور تیسرا ہے سود ، اصل پیسے پر سود کا قرض جو کہ سود کو اسلام میں ممانعت ہے ۔ ان حالات کے علاوہ لیا گیا کر انشاءاللہ اس وظیفے کی وجہ سے بہت جلد ادا ہو جائے گا۔ آپ کو یہ بھی بتاتے چلیں کہ اس وظیفے کو کرنے کی اجازت عام ہے ہر شخص کرسکتا ہے یہ وظیفہ آپ بھی کرسکتے ہیں ۔اس وظیفے کو کرنے کے لیے آپ کو کسی سے اجازت کی ضرورت نہیں ہے۔

قرض سے نجات کا وظیفہ نمبر 1۔
Karz Utarne Ki Dua

اس وظیفے کے شروع میں آپ نے ایک مرتبہ درود شریف پڑھنا ہے اگر درود ابراہیمی پڑھے تو زیادہ بہتر ہے۔ اس کے بعد آپ نے ایک بار بسم اللہ الرحمن الرحیم اور ہزارمرتبہ یَا فتّا حُ سونے سے پہلے 90روز تک پڑھ کر دعا کرنی ہے ۔ وظیفے کے دوران بات کرنا منع ہے۔ وظیفہ پڑھ کر بات کیے بنا سو جانا ہے۔ وظیفہ بعدنمازعشاء شروع کریں اور اگر دوران وظیفہ قرض ادا ہو جائے تو وظیفے کو 90 روز تک ہی پڑے۔ اس کی ذکوٰۃ یہ ہے کہ کسی غریب کو پیٹ بھر کر کھانا کھلادیں۔ انشاء اللہ اللہ کے حکم سے آپ کا قرض جلدی ادا ہوجائے گا یہ نہایت پر اثر وظیفہ ہے ۔

Karz Ada Karne Ka Wazifa

عالم یہ ہے کہ پورا ملک قرضہ میں پھنسا ہوا ہے مہنگائی حد سے بڑھ چکی ہے۔ لہذا لوگوں کو زندگی کی دوڑ جیتنے کے لیے قرض لے کر اس امید پر کاروبار کرنا پڑتا ہے۔ کہ روپیہ آتے ہی قرض ادا کردیں گے کوئی بنک سے کوئی کسی دوستوں اور عزیز سےقرض لیتا ہے۔ لیکن قرض ایک ایسا مرض ہے کہ وہ مشکل سے ہی ادا ہوتا ہے۔ قرض کے بارے میں حکم ہے کہ مرنے سے پہلے اسے ادا کرنا چاہیے۔ بہت سے لوگ قرض ادا نہیں کر پاتے۔ نہ ہی ان کی اولاد میں اتنی سکت ہوتی ہے کہ وہ قرض ادا کر سکے۔ لیکن قرض ادا کرنا واجب ہوتا ہے قرض کی ادائیگی کیلئے لوگ اور قرض لے کر قرض ادا کرتے ہیں۔ لیکن قرض پھر بھی ادا نہیں ہو پاتا۔

قرض ادا کرنے کی دُعا نمبر 2۔

ایسے تمام افراد جو قرض ادا نہ کر پاتے ہوں کیونکہ ان کے پاس وسائل ہی نہیں ہوتے۔ وسائل پیدا ہو بھی جائیں تواخراجات سر اٹھا لیتے ہیں۔ تو ایسے تمام حضرات یہ مجرم وظیفہ کریں ۔ انشاءاللہ اللہ پاک ایسے اسباب پیدا کرے گے کہ خود بخود قرض ادا ہوجائے گا۔ وہ وظیفہ یہ ہے۔ آپ نے کرنا یہ ہے کہ سورہ بنی اسرائیل کی آیت نمبر 105 کو یاد کر لینا ہےاور کسی بھی فرض نماز کے بعد اول گیارہ مرتبہ درود ابرھیمی اس کے بعد آپ نے 101 مرتبہ سورہ بنی اسرائیل کی آیت نمبر 105 کو پڑھنا ہے اور آخر میں آپ نے پھر گیارہ مرتبہ درود ابراہیمی پڑھنا ہے۔ یہ نہایت مجرب عمل ہے نماز کی پابندی لازمی ہے ۔ انشاءاللہ تعالیٰ مجھے یقین ہے کہ اللہ اس بندے کے سر سے قرض کا بوجھ اتارنے کے لئے اسباب میں فراخی فراہم کریں گے۔

پوسٹ کو شیئر کریں۔۔
  • 2
    Shares