Aye naseeb mery naseeb tu lyrics 228

اے نصیب میرے نصیب توذرا صبر رکھ، ذرا  صبر کر

Aye naseeb mery naseeb tu zara sabar rakh zara sabar rakh

اے نصیب میرے نصیب توذرا صبر رکھ، ذرا  صبر کر
وہ بلايں گے ہمیں اک دن، او نشیں ہیں عرشوں کے عرش پر
Aye naseeb mery naseeb tu zara sabar rakh zara sabar rakh
Wo pulaye gay hummary ek din, onshay hain arsho kay arsh par

کہ وہ جانتے ہیں دلوں کو بھی اور جانتے ہیں دلوں کو بھی
کہ وہ دل نشین ہیں دلوں کے بھی، ذرا اور دل سے تو عرض کر
Ke wo janty hain diloo ko bhi or janty hain dilo ko bi
Kay wo dile naseen hain dilo kay bhi, zara or dil say tu arz kar

تو مریض عشق رسول ہے، اور جہان نصیب یہ مرض ہے
وہ طبیب عالم مرض ہے، کیوں سسک رہا ہے تو مرض پر
Tu mareeze ishaqe rasool hai or jahan naseeb ye marz hai
Wo tabeebe aalam marz hai kyun sisaq raha hai tu marz par

جو اثر کرے عرشوں کے پار، تو سنا کچھ ایسی کمال طرز
جا سسک تو پھر اسی طرز پہ، کہ وہ آئیں گے تیری طرز  پر
Jo asar kary arshoo kay paar tu suna kuch aisi kamal tarz
Ja sisak tu phir esi tarz pay kay wo aye gay teri tarz par

جو بھرا ہے دامن گناہوں سے، تو کر توبہ اور یہ عقیدہ رکھ
دکھا پھر ندامتیں سجدے میں، وہ جیلاينگے تجھے حشر پر
Jo bhara hai daman gunaho say tu kar toba or ye aqida rakh
Dekha phir nedamtain sajda main wo jelangy tujhy hasar par

یہی حسرت محبوب ہے، وہ بلايں عرش مدینہ اور
کروں آنکھیں اپنی میں بند ادھر، سو جاؤں میں پھر فرش پر
Yahi hasrate mehboob hai wo bulayn arshe madina or
Karoo aankhy apny mae band edhar so jaoo main phir farash par

پوسٹ کو شیئر کریں۔۔